Projekt Queer Refugees Deutschland

بہترین مشق – ایل ایس بی ٹی آئی- مہاجرین کے مردوخواتین کارکنوں کے لئے ملک بھرنیٹ ورک کا آٹھواں اجلاس

ایل ایس بی ٹی آئی- مہاجرین کے مردوخواتین کارکنوں کے ملک گیر نیٹ ورک کا ایل ایس بی ٹی آئی- مہاجرین کی سرگرمیاں جاری رکھنے کے لیے آٹھواں اجلاس ہوا۔ یہ ملاقات 9 سے 12 اکتوبر 2020 تک کولون کے پرانے فائر اسٹیشن میں ہوئی۔ اس بار ورکشاپ کا بحث مباحثہ "بہترین پریکٹس” کے گرد گھومتا رہا، دوسرے الفاظ میں کارکنوں کے لیے ثابت شدہ اور امید افزا تصورات کی مشغولیات کے لیے۔ نیٹ ورک میٹنگ کولون سی ایس ڈی کے پروگراموں میں سرایت کر گئی تھی، جس میں ایل ایس بی ٹی آئی -مردوخواتین کارکنوں کارکنوں نے بھی حصہ لیا۔

اس بار نیٹ ورکنگ میٹنگ میں مجموعی طور پر 13 مردوخواتین کارکنوں نے حصہ لیا۔ اس میں حاضرین نے اپنے آٹھ آبائی ممالک اور سات وفاقی ریاستوں کی نمائندگی کی۔ شروعات میں انہوں نے پرائیڈ ابھی – کولون پرائیڈ شو میں شرکت کی۔ دوسرے دن پھر رضاکارانہ کام اور سرگرمیوں میں "بہترین عمل” کے بارے میں مفصل بات چیت ہوئی۔ اس موقع پر مردوخواتین کارکنوں کو عمل کے سہولت کار اور مشیر سینڈرا کلیدیٹر(Sandra Kleideiter) سے مشورہ کرنے اور تجربات کا تبادلہ کرنے کا موقع بھی ملا۔ تیسرے دن  دوسری چیزوں کے علاوہ  سی ایس ڈی کی سائیکل ڈیمو)مظاہرے( میں شرکت کاپروگرام تھا۔ایک روز قبل ایک ورکشاپ میں انا ولف (Ina Wolf) کی رہنمائی میں مل کر ایک تقریرکی تیاری کی گئی تھی۔ اختتامی ریلی میں کیو آر ڈی مردوخواتین کارکنوں نے 3000 سے زیادہ افراد اور موجود پریس کے سامعین کے سامنے اسے ایک عوامی مجلس میں پیش کیا۔ اس کا مواد یہ تھا کہ وہ پناہ کے نظام میں کون سی شکایات دیکھتے ہیں اور ان کے نقطہ نظر سے کیا کچھ ٹھیک ہونے کی ضرورت ہے تاکہ ان کا تدارک کیا جاسکے۔ نیٹ ورک میٹنگ کا اختتام کولون کے آرٹھیٹر (Kölner Arttheater) میں ایک ساتھ جمع ہو کر ہوا۔

Scroll Up